​پاکستان شنگھائی تعاون تنظیم کے روشن مستقبل کے حوالےسے پر امید ہے

2018-06-09 13:16:31
Comment
شیئر
شیئر Close
Messenger Messenger Pinterest LinkedIn

رواں برس  پاکستان اور بھارت پہلی مرتبہ  باضابطہ رکن ممالک  کی حیثیت سے شنگھائی تعاون تنظیم  کی چھینگ تاو سمٹ میں شرکت کر رہے ہیں ۔   جنوبی ایشیا  کے دونوں اہم ممالک   بھارت اور پاکستان ایس سی او کے علاقائی کثیرالنظام  ڈھانچے کے  تحت   حاصل ہونے والے  نئے مواقعوں کے حوالے سے پر امید ہیں ۔

پاکستان کے سابق وزیر اعظم  شوکت  عزیز  کے  مطابق   ایس سی او میں پاکستان کی شمولیت  کے  بڑے مثبت اثرات مرتب ہوں گے ۔ انہوں کہا  ایس سی او   کے پلیٹ فارم سے اقتصادی ترقی بہتر ہو سکتی ہے۔   انفراسڑکچر کی بہتری میں تعاون ہو سکتا ہے اور کامرس اورٹریڈ بڑھ سکتی ہے۔علاوہ ازیں  سیکورٹی ایشو ز میں تعاون ہو سکتا ہے ۔ ہر ملک یہ چاہتا ہے کہ ترقی آئے ، خوشحالی آئے ، عوام خوشحال ہوں اس سے آپس میں ہم آہنگی بہتر ہو گی۔

ایس سی او کی کوریج    کے لئے آئی ہوئی   پاکستان کے نوائے وقت گروپ کی  صدر محترمہ  رمیضہ نظامی   نے کہا کہ پاکستان چاہے گا کہ ریجنل سیکورٹی ایشوز پر چائنہ کے ساتھ کھڑا ہو۔ اور  پاکستان کی تمام سیاسی جماعتیں جانتی ہیں کہ چین پاکستان کا بہترین دوست ہے ۔ چین کا مفاد پاکستان کا مفاد ہے۔ اس سے پاکستان کو " شنگھائی سپرٹ"   کو ڈسپلے کرنے کا موقع ملے گا۔


شیئر

Related stories