چین میں کافی کی کاشت کا پہلا گاوں

2017-09-19 15:10:40
Comment
شیئر
شیئر Close
Messenger Messenger Pinterest LinkedIn

 چین میں کافی کی کاشت کا  پہلا گاوں

 چین میں کافی کی کاشت کا  پہلا گاوں

 چین میں کافی کی کاشت کا  پہلا گاوں

 چین میں کافی کی کاشت کا  پہلا گاوں

 چین میں کافی کی کاشت کا  پہلا گاوں

 چین میں کافی کی کاشت کا  پہلا گاوں

 چین میں کافی کی کاشت کا  پہلا گاوں

 چین میں کافی کی کاشت کا  پہلا گاوں

 چین میں کافی کی کاشت کا  پہلا گاوں

 چین میں کافی کی کاشت کا  پہلا گاوں

 چین میں کافی کی کاشت کا  پہلا گاوں

 چین میں کافی کی کاشت کا  پہلا گاوں

 چین میں کافی کی کاشت کا  پہلا گاوں

 چین میں کافی کی کاشت کا  پہلا گاوں

 چین میں کافی کی کاشت کا  پہلا گاوں

 چین میں کافی کی کاشت کا  پہلا گاوں

 چین میں کافی کی کاشت کا  پہلا گاوں

 چین میں کافی کی کاشت کا  پہلا گاوں

 چین میں کافی کی کاشت کا  پہلا گاوں

 چین میں کافی کی کاشت کا  پہلا گاوں

چین کے صوبہ یون نان کی تحصیل بینگ چھوان کے تحت جو گو لا نامی گاوں ایک عام پہاڑی   گاوں ہے لیکن اس کی خصوصیت یہ ہے کہ اس گاوں کے تین سو چار خاندان کافی کے پودوں کی   کاشت کرتے ہیں ۔ اور اسے چین میں کافی   کی کاشت کرنے والا پہلا گاوں کہا جاتا ہے۔
بتایا گیا ہے کہ اس گاوں میں   سب سے پرانا کافی کا پودہ  انیس سو چار میں اگایا گیا تھا  اور بعد میں کافی کے   درختوں کی تعداد میں اضافہ ہوتا رہا اور اب اس گاوں  میں کافی کے درختوں کی تعداد   ایک ہزار ایک سو چونتیس تک جا پہنچی ہے  اور ان کی اوسط عمر نوے سال  کے لگ بھگ ہے   ۔ اس طرح جو گو لا گاوں چین میں کافی کا منبع  بن گیا اور مقامی باشندوں کی ہر روز   کافی پینے کی عادت بھی بن  گئی ہے ۔ اس گاوں  کی وجہ سے  بینگ چھوان تحصیل میں کافی   کی صنعت کی  بھی ترقی ہوئی ہے ۔ 

شیئر

Related stories